11

میری زندگی چند ہفتے رہ گئی ہے ، میں اس قابل نہیں کہ پاکستان کا سفر کر سکوں ، خدارا مجھے میری بیٹی سے ملا دو ۔۔۔۔۔۔ لندن کے ایک ہسپتال میں موجود پاکستانی شہری کا دکھڑا اس خبر میں ملاحظہ کریں


لندن (ویب ڈیسک) ایسٹ لندن کے نیو ہیم ہسپتال میں زیر علاج کینسر کے ایک جاں بلب مریض 65 سالہ محبوب عالم نے پاکستان میں موجود اپنی اس بیٹی سے ملنے کی آخری خواہش کا اظہار کیا ہے، جس کو اس نے کبھی نہیں دیکھا، محبوب عالم نے اپنی بیٹی کو برطانیہ کا

لندن مقیم پاکستانی صحافی مرتضیٰ علی شاہ اپنی ایک رپورٹ میں لکھتے ہیں ۔۔۔۔۔۔۔ ویزا جاری کرنے کی اپیل کی ہے۔ محبوب عالم اچھے مستقبل کے سپنے آنکھوں میں سجائے برطانیہ آیا تھا لیکن وہ برطانیہ میں اپنے قیام کو ریگولرائز کرانے میں ناکام رہا اور ویزا کی میعاد ختم ہوجانے کے بعد سے غیر قانونی طور پر برطانیہ میں مقیم ہے، اب وہ اتنا شدید بیمار ہے کہ ڈاکٹروں نے اسے سفر کرنے سے منع کر دیا ہے اور کوئی بھی ایئر لائن اس حالت میں اسے طیارے پر سوار کرانے کو تیار نہیں ہے۔ لندن سے ایک شخص تبریز اورہ نے ٹوئٹر پر اس کی حالت زار سے برطانوی ہائی کمشنر کو آگاہ کیا، جس پر پاکستان میں برطانوی ہائی کمشنر نے اس کی بیٹی کو ویزا جاری کرنے میں مدد کرنے کی یقین دہانی کراتے ہوئے محبوب عالم کی13 سالہ بیٹی کو اپنی تفصیلات کے ساتھ ویزا کی درخواست دینے اور اس کی ایک کاپی انھیں بھیجنے کی ہدایت کی ہے۔ محبوب عالم نے بستر مرگ سے یہ اپیل کی تھی کہ میری زندگی اب چند ہفتوں کی رہ گئی ہے۔ میں پاکستان نہیں جاسکتا، کیونکہ ڈاکٹروں نے اس کی ممانعت کردی ہے، برائے مہربانی میری بیٹی کو برطانیہ کا ویزا جاری کرانے میں مدد کریں، تاکہ میں اپنی بیٹی سے پہلی اور آخری مرتبہ مل سکوں، جس پر برطانوی ہائی کمشنر نے اپنا ای میل دیتے ہوئے اسے درخواست دینے اور انھیں اس کی اطلاع دینے کو کہا ہے۔ ہسپتال میں جیو نیوز سے باتیں کرتے ہوئے محبوب عالم نے صورت حال کا نوٹس لینے پر برطانوی ہائی کمشنر کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا ہے کہ میری اپیل سننے پر میں ہائی کمشنر کا مشکور ہوں۔ محبوب عالم نے بتایا کہ میرے لاہور سے برطانیہ آنے کے چند ہفتے بعد ہی میری بیٹی پیدا ہوئی تھی اور میں اسے ابھی تک دیکھ بھی نہیں سکا، اب جبکہ میری زندگی چند ہفتوں کی رہ گئی ہے، اپنی بیٹی کو دیکھنا میری آخری خواہش ہے۔ نیو ہیم یونیورسٹی ہسپتال کی ڈاکٹر ریبیکا مائوسن نے ان کی حمایت میں ایک خط لکھا ہے، جس میں محبوب عالم کی فیملی کو ان سے ملنے کی اجازت دینے کی اپیل کی گئی ہے۔ انھوں نے لکھا ہے کہ نیو ہیم ہسپتال میں زیر علاج مریض مرنے کے قریب ہے، اس نے درخواست کی ہے جو کہ مناسب معلوم ہوتی ہے کہ اس کی فیملی کو برطانیہ آنے اور محبوب عالم کے آخری لمحات میں اس سے ملاقات کی اجازت دی جائے، محبوب عالم پرانی انارکلی کے علاقے میاں بازار میں پیدا ہوا اور وہیں چھوٹی موٹی ملازمتیں کرتا تھا، جس کے بعد وہ بہتر مستقبل کی آس میں برطانیہ آگیا لیکن یہاں بھی قسمت نے یاوری نہیں کی اور اب ہسپتال میں زندگی کی آخری سانسیں لے رہا ہے۔(ش س م)



Source link