14

’’ ہم حکومت گرا دیں گے ‘‘ سردار اختر مینگل کے اعلان نے وزیر اعظم عمران خان کے لیے بڑی مشکل کھڑی کر دی



ڈیرہ مراد جمالی ( نیوز ڈیسک) حکومت کے اتحادی بلوچستان نیشنل پارٹی کے سربراہ سردار اختر مینگل نے واضح کیا ہے کہ اگر پارلیمانی نظام اور اٹھارویں ترمیم کو چھیڑنے کی کوشش کی گئی تو اس کے خطرناک نتائج برآمد ہوں گے،عید قرباں پر بہت سی حکومتوں کو قربانی دینی ہوگی جس

میں بلوچستان حکومت سب سے پہلے ہم گرائیں گے۔میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے سردار اختر مینگل نے کہا کہ عید قرباں پر بہت سی حکومتوں کو قربانی دینی ہوگی جس میں بلوچستان حکومت سب سے پہلے ہم گرائیں گے۔انہوں نے کہا کہ صرف اپوزیشن پر احتساب کا ڈنڈا چلے گا تو اس سے ملک میں شورشرابہ ضرور ہوگا۔اختر مینگل نے کہاکہ ملک کو تجربہ گاہ بنادیا گیا ہے موجودہ حالات میں ملک مزید تجربوں کا متحمل نہیں ہوسکتا۔ انہوںنے کہاکہ وفاقی حکومت نے ہمارے چھ نکاتی معاہدے پر 7ماہ گزرنے کے بعد بھی عملدرآمد نہیں کیا ہے اس معاہدے میں باقی 4ماہ کا وقت رہ گیا ہے اب دیکھنا ہے کہ وفاقی حکومت اپنے معاہدوں کی کہاں تک پاسداری کرتی ہے۔ دوسری جانب سینئر صحافی اخلاق باجوہ کی رپورٹ کے مطابق بجٹ تک ہوم ورک مکمل کرنے کے بعد عثمان بزدار کے خلاف تحریک عدم اعتماد لائی جائے گی جس کے کامیاب ہونے پر سردار اویس لغاری وزارت اعلیٰ کے امیدوار ہو سکتے ہیں۔ ذرائع کے مطابق مقتدر حلقوں نے وزیراعظم عمران خان پر واضح کردیاہے کہ وہ وفاق اور بالخصوص پنجاب کی گورننس سے مطمئن نہیں ہیں اس لئے پنجاب کو فوری طور پر ٹھیک کیا جائے، اس پیغام کے بعد وزیراعظم 10 اپریل کو لاہور آئے اور وزیراعلیٰ پنجاب کو واضح الفاظ میں بتادیا کہ آپ کی وجہ سے مجھے باتیں سننا پڑتی ہیں جس پر وزیراعلیٰ نے بھی شکایات کے انبار لگادئیے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ وزیراعلیٰ پنجاب نے صوبے کی دو اعلیٰ شخصیات کی بے جا مداخلت کی شکایت کی اور بیوروکریسی کے روئیے بارے بھی آگاہ کیا۔ عمران خان نے کہا آپ کو ہر طرح سے اختیار دیا گیا ہے آپ خود کو اہل ثابت کریں۔ اس دوران پنجاب کی اعلیٰ بیوروکریسی کو بھی بلا کے پیغام دیا گیا کہ اگر صوبے میں رہنا ہے تو کام کریں، وزیراعظم کی ڈانٹ ڈپٹ کے بعد وزیراعلیٰ نے بیوروکریسی میں اکھاڑ پچھاڑ شروع کردی ہے۔



Source link