26

اسے کہتے ہیں سیاست۔۔۔۔ حکومت چوہدری برادران کو ایک اور وزارت دینے پر رضا مند ہوگئی، یہ وزارت کسے دی جارہی ہے؟ ناقابلِ یقین خبر


.اسلام آباد (نیوز ڈیسک) وزیر اعظم سے چوہدری شجاعت حسین نے ملاقات کی ہے۔ ذرائع نے امکان ظاہر کیا ہے اس ملاقات کے نتیجے میں ق لیگ کو وفاقی کابینہ میں ایک اور وزارت مل سکتی ہے۔ترجمان وزیر اعظم ہاؤس کے مطابق وزیر اعظم عمران خان سے چوہدری شجاعت حسین نے وزیر اعظم آفیس میں ملاقات کی۔

اس موقع پر وزیر برائے ہاﺅسنگ چوہدری طارق بشیر چیمہ اور وزیر اعظم کے معاون خصوصی نعیم الحق بھی موجود تھے۔ ملاقات میں ملک کی مجموعی سیاسی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا۔ چوہدری شجاعت حسین کی جانب سے موجودہ صورتحال کے دوران وزیر اعظم کے قائدانہ کردار کی تعریف کی گئی ۔ذرائع کا کہنا ہے کہ اس ملاقات میں کابینہ میں توسیع کے معاملے پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔ ذرائع نے امکان ظاہر کیا ہے کہ ق لیگ کو وفاقی کابینہ میں ایک اور وزارت بھی مل سکتی ہے جس کیلئے چوہدری سالک اور مونس الہٰی فیورٹ امیدوار ہیں۔خیال رہے کہ اس سے قبل حکومتی اتحاد میں دراڑ پڑنے کا خدشہ پیدا ہوا تھا،مونس الہیٰ کو وفاقی کابینہ میں شامل نہ کرنے کے معاملہ پر مسلم لیگ( ق) نے پنجاب حکومت سے عدم تعاون کا عندیہ دے دیا تھا،دنیا نیوز نے اس حوالے سے دعویٰ کیا تھا کہ چودھری شجاعت اور نعیم الحق کی ملاقات میں فارمولہ طے کیا گیا تھا لیکن اس حوالے سے کوئی عملی اقدامات سامنے نہیں آسکے۔ مونس الہی کو وفاقی کابینہ میں شامل کرنے کا وعدہ کیا گیا تھا لیکن تاحال اس پر کوئی عملدرآمد سامنے نہیں آیا۔ شجاعت حسین اور نعیم الحق میں کابینہ کی توسیع پر اتفاق ہوا تھا، جبکہ ذراءٰ کے مطابق پرویز الہی کی جانب سے حکومت پر دباو بڑھانے کے لیے 2 روز قبل اجلاس بھی طلب کیا گیا تھا۔ جس کے بعد عمران خان نے فیصلہ کیا تھا کہ اتحادی جماعت ق لیگ کے تمام تحفظات کو دور کیا جائے گا اور اس کے بعد یہ فیصلہ کیا گیا ہے کہ ق لیگ کو وزارت دے دی جائے



Source link