8

’’پھر نا کہنا خبر نا ہوئی! مجھے اوپر سے اڑر ہیں۔۔۔‘‘ سی سی پی او لاہور نے تشدد کرنے والے پولیس افسروں کو دوٹوک بتا دیا


لاہور(ویب ڈیسک)سی سی پی او لاہور بی اے ناصر نے کہا ہے کہ زیر حراست یا گرفتار ملزموں کے بھی حقوق ہوتے ہیں،کوڈ آف کنڈکٹ اور آئی جی پولیس کی ہدایات پر عملدرآمد یقینی بنائیں گے،تشدد یا بدسلوکی کرنے والے پولیس افسروں کا کسی پلیٹ فارم پر دفاع نہیں کروں گا بلکہ سخت کارروائی کی جائے گی۔

پولیس لائنز قلعہ گجر سنگھ میں ایک اعلی سطح اجلاس کی صدارت کرتے ہوئےسربراہ لاہور پولیس نے عشرہ محرم بالخصوص یوم عاشور پر فول پروف سیکیورٹی یقینی بنانے پر تمام پولیس افسروں اور جوانوں کو شاباش دیتے ہوئے کہا کہ عوام نے یوم عاشور پر لاہور پولیس کے اچھے ٹیم ورک پر اعتماد کا اظہار کیا ہے،اچھی کارکردگی پر وزیراعلیٰ پنجاب اور آئی جی پولیس کی شاباش لاہور پولیس کے لئے اعزاز ہے۔ انہوں نے اس بات پر خوشی کا اظہار کیا کہ یوم عاشور پر پولیس سکیورٹی ڈیوٹی کے ساتھ ساتھ شہریوں کی خدمت بھی کرتی رہی،شہریوں کے ساتھ حسن سلوک سے پولیس کے بارے میں اچھا پیغام گیا،عوام کی جان ومال کا تحفظ اور خدمت پولیس کا اولین فرض ہے،محرم الحرام کے جذبے کو آئندہ بھی برقرار رکھنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ تھانوں میں شہریوں اور ملزموں سے بدسلوکی پر زیرو ٹالرنس ہے،پریشانی یا مصیبت کے وقت تھانے آنے والوں کے ساتھ محبت اور ہمدردی سے پیش آئیں۔اجلاس میںڈی آئی جی آپریشنز اشفاق خان، ڈی آئی جی انویسٹی گیشن انعام وحید، سی ٹی او کیپٹن (ر) ملک لیاقت، ایس ایس پی ایڈمن اطہر وحید، ایس ایس پی آپریشنز اسماعیل کھاڑک، ڈویژنل ایس پیز، تمام ایس ڈی پی اوز اور ایس ایچ اوز نے شرکت کی۔ جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ نئے نظام کے تحت منتخب نمائندگان کو بااختیار بنایا ہے تاکہ مسائل کے حل میں دشواری نہ ہو۔وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت مقامی حکومتوں کے نئے نظام سے متعلق اجلاس ہوا ۔جس میں متعارف کرائے جانے والے مقامی حکومتوں کے نئے نظام پر عملدرآمد سے متعلق تبادلہ خیال کیا گیا جب کہ وزیراعظم کو خیبرپختونخوا اور پنجاب میں متعارف کرائے جانے والے مقامی حکومتوں کے نئے نظام کے خدوخال پر تفصیلی بریفنگ بھی دی گئی۔اجلاس میں وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ متعارف کرایا جانے والا مقامی حکومتوں کانیا نظام حقیقی معنوں میں انقلاب برپا کرے گا، نئے نظام کے تحت منتخب نمائندگان کو بااختیار بنایا ہے تاکہ مسائل کیحل میں دشواری نہ ہو۔وزیراعظم کا کہنا تھا کہ مقامی حکومتیں قومی قیادت کی نرسریاں ثابت ہوں گی، ترقیاتی فنڈز کی مقامی سطح پر منتقلی سے عوام کے بنیادی مسائل کا حل ممکن ہوگا۔



Source link