17

’’ ہماری فوج اس قابل نہیں کہ جدید جنگ جیت سکے۔۔۔۔‘‘ پاکستان پیپلز لیبریشن فورس، روس اور چائینہ کے ساتھ مل کر انڈیا کا کیا حال کرنے والا ہے؟ بھارتی فوجی افسر نے مودی سرکار کو آئینہ دکھا دیا


نئی دلی (ویب ڈیسک) بھارتی فوج کے سابق افسر اور معروف لکھاری پروین ساہنی نے بھارتی فوج کی قابلیت کا بھانڈہ بیچ چوراہے میں پھوڑ دیا۔ پروین ساہنی کا کہنا ہے کہ بھارتی فوج دور جدید کی جنگ کیلئے ناکارہ ہوچکی ہے، پاکستانی فوج کو پیپلز لبریشن آرمی کی سپورٹ حاصل ہے، روس اور چین کا مودی پر

مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے شدید دباﺅ ہے اور عنقریب یہ دباﺅ ناقابل برداشت حد تک بڑھ جائے گا۔بھارتی فوج کے ریٹائرڈ افسر پراوین ساہنی نے ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں کہا کہ ہم یہ تو کہتے ہیں کہ اکسائی چین اور آزاد کشمیر پر قبضہ کرلیں گے لیکن ہمارے ملٹری لیڈرز کو یہ تک نہیں پتہ کہ جنگ کتنی زیادہ تبدیل ہوچکی ہے۔ اس وقت پیپلز لبریشن آرمی اگلے محاذ پر ہے اور امریکی فوج کو ٹف ٹائم دے رہی ہے۔ اس کے ساتھ ہی چینی فوج پاک فوج کو بھی مضبوط کر رہی ہے کیونکہ صدر شی چن پنگ ہر قیمت پر سی پیک کی حفاظت کریں گے۔ ہمیں صرف اسی چیز کی حفاظت کی فکر کرنی چاہیے جو ہمارے پاس موجود ہے۔پراوین ساہنی نے ایک اور ٹویٹ میں کہا کہ مودی پر پاکستان سے معنی خیز گفتگو کیلئے چین اور روس کا دباﺅ ہے ، روس اور چین اعتماد سازی نہیں بلکہ مسئلہ کشمیر کا حل چاہتے ہیںاور عنقریب یہ دباﺅ مودی سرکار کیلئے ناقابل برداشت ہوجائے گا۔انہوں نے مزید کہا کہ ہماری فوج انٹیلی جنس بیسڈ آپریشنز کے علاوہ کچھ بھی نہیں کرسکتی ہم نے اپنی فوج کو دور جدید کی جنگ کیلئے ناکارہ بنادیا ہے، آج ایک نئے زمانے کی جنگ ہمارے چہرے کو گھور رہی ہے۔ جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق صوبائی وزیر اقلیتی امور سندھ ھری رام کشوری لال ،معاون خصوصی ڈاکٹر کھٹو مل جیون، معاون خصوصی ویر جی کولھی، ایم پی اے رانا ھمیر سنگھ اور ایم این اے ڈاکٹر مھیش ملانی نے اپنے مشترکہ بیان میں مودی سرکار کی جانب سے کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے پر شدید رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ بھارت کشمیر میں کھلی دہشت گردی پر اتر آیا ہے،انسانی حقوق کی عالمی تنظیمیں بالخصوص اقوام متحدہ اس کا نوٹس لیں.انہوں نے کہا کہ کشمیر متنازعہ علاقہ ہے مودی سرکار کے پاس کشمیر کو بھارت میں ضم کرنے کا کوئی اختیار نہیں، یہ عمل عالمی قوانین کی خلاف ورزی ہے،اقلیتی برادری کے رہنماؤں نے کہا کہ مودی سرکار نے بھارت کے سیکولر نظریہ کو دفن کر دیا ہے، سندھ میں بسنے والی ہندو برادری افواج پاکستان کے ساتھ کھڑی ہے اور اپنی دھرتی ماں کی حفاظت کے لیے ہر قربانی دینے کے لیے تیار ہے.ہندو برادری کی جانب سے 14اگست کے دن سندھ کے مختلف شہروں میں کشمیری بھائیوں سے یکجہتی کے لئے ریلیاں نکالی جائیں گی اور مندروں میں کشمیر کی سلامتی کے لئے پوجا پاٹ کی خصوصی تقریبات منعقد کی جائیں گی. اقلیتی برادری کے رہنماؤں نے مندروں اور عبادت گاہوں کے باہر پاکستان اور کشمیر کے پرچم لہرانے کا اعلان کیا ہے۔



Source link