18

نوکری کے لیے “سی وی” اور ڈگریوں کی ضرورت نہیں اور نہ ہی ان کی دستاویزات کی تصدیق کروانا پڑے گی ، اب ہر پاکستانی کی تعلیم اور قابلیت سمیت تمام ریکارڈ کہاں موجود ہو گا؟ عمران حکومت نے نیا نظام متعارف کروا دیا


اسلام آباد (ویب ڈیسک ) اب شہریوں کو ڈگری ، سند اور دستاویزات کی بار بار تصدیق کی ضرورت نہیں، وزارت آئی ٹی نے شہریوں کی سہولت کے لیے ڈیجیٹل لاکر کے قیام کا منصوبہ تیار کر لیا۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ اس منصوبے کے بعد شہریوں کو بہت زیادہ آسانی ہو گی

جب کہ شہری دستاویزات ایک بار تصدیق کروا کے ڈیجیٹل لاکر پر اپلوڈ کر دیں گے۔ڈیجیٹل لاکر کا پائلٹ منصوبہ وفاقی دارالحکومت میں شروع کیا جائے گا،تمام وزارتوں اور محکموں کو ڈیجیٹل لاکر سے منسلک کیا جائے گا۔نیشنل انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ نے منصوبے کے لیے 200 ملین مانگ لیے۔آئندہ سال کے پی ایس ڈی پی میں منصوبے کے لیے ساڑھے تین کروڑ روپے رکھنے کی تجویز دی گئی ہے۔ڈیجیٹل لاکر کا ڈی ایس یو نظام وفاقی حکومت کے پاس ہو گا۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ آئندہ مالی سال کے لیے اس منصوبے کے لیے 35 ملین رکھنے کی تجویز دی گئی ہے تاہم اس منصوبے پر کل لاگت 200 ملین آئے گی۔منصوبے کے تحت شہریوں کو ایک ہی بار اپنی دستاویزات سکین کر کے تصدیق کرنے کے بعد ڈیجیٹل لاکر میں اپلوڈ کرنی ہو گی جس کے بعد وہ کسی بھی محکمے میں جا کر اپنی دستاویزات تک رسائی حاصل کرنے کے لیے لاگ ان کر سکتے ہیں ۔واضح رہے کہ شہریوں کے لیے بار بار ڈگریوں کی تصدیق مسئلہ بن جاتی ہے اور شہری بھی کسی ایسے منصوبے کی خواہش کر رہے تھے جسس میں ان کو بار بار اپنی دستاویزات تصدیق کرانے کی ضرورت نہ پڑے۔شہریوں نے اس منصوبے کو اپنے لیے خوش آئند قرار دے دیا اور کہا ہے کہ منصوبہ شروع ہونے کے بعد شہری اس سہولت سے خوب فائدہ اٹھا سکیں گے۔اس لیے اب وزارت آئی ٹی نے شہریوں کی سہولت کے لیے ڈیجیٹل لاکر کے قیام کا منصوبہ تیار کر لیا ہے۔





Source link