10

6 سال کے دوران چین میں غربت کا خاتمہ کر دیا گیا ، مگر کیسے ؟ وزیراعظم عمران خان کے کام کی خبر


بیجنگ(ویب ڈیسک )چین میں غربت کی لکیر سے نیچے زندگی بسر کرنے والے 85فیصد افراد کو غربت سے نجات دلا دی گئی ہے۔چین نے غربت میں کمی کے لیے نمایاں کامیابیاں حاصل کی ہیں۔ اور اس نے گزشتہ چھ سال کے دوران80ملین افراد کو غربت سے نجات دلائی ہے۔2012میں کم آمدنی والے لوگوں کی

تعداد98.99ملین تھی جو کم ہوکر2018کے اختتام تک صرف16.60ملین رہ گئی۔ اس طرح چین نے اوسطاً13ملین افراد کو ہر سال غربت سے نجات دلائی ان خیالات کا اظہار غربت میں کمی کے محکمے کے ڈائریکٹر لیویانگ فو نے گزشتہ روز 13ویں نیشنل پیپلز کانگرس کے دوسرے اجلاس کے دوران ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہ 6سال قبل 2012میں ملک سے غربت کے خاتمے کا ہدف مقرر کیا گیا تھا۔چینی کمیونسٹ پارٹی مرکزی کمیٹی کے طے کردہ ہدف کے مطابق چین نے2020تک ملک سے غربت کے خاتمے کا عزم کررکھا ہے۔1 لاکھ 50ہزار افراد غربت کی لکیر سے نکل گئے جبکہ 2017میں شہریوں کا طرز زندگی بہتر بنانے کیلئے 16.7ارب یوآن (2.6ارب امریکی ڈالر) کی سرمایہ کاری کی گئی،جس سے لوگوں کی آمدنی میں اضافہ ہوا اور اس رقم سے غربت میں کمی کے 1700منصوبے مکمل کئے گئے، تبت کا 85فیصد سے زیادہ رقبہ سطح سمندر سے 4ہزار میٹر کی بلندی پر واقع ہے جہاں غربت کی سب سے بڑی وجہ سخت قدرتی حالات ہیں۔ ایک رپورٹ کے مطابق تبت میں ابھی تک 2440دیہات غربت کی لیکر سے نیچے زندگی بسر کر رہے ہیں اور حکومت اس سال 2100دیہات کو غربت سے نکالنے کیلئے 11.7ارب یوآن خرچ کریگی۔ چین کے نائب وزیر اعظم ہوچن ہوا نے کہا ہے کہ غربت کے خلاف جنگ جیتنے کےلئے ریلیف پروگرام کی بہتر طور پر نگرانی کی جائے ۔ مقامی حکام کو اس کام کی باقاعدگی سے نگرانی کرنی چاہیے تاکہ غربت کے خاتمے کےلئے کئے گئے اقدامات کو مزید موثر بنایا جا سکے ۔ وہ یہاں غربت میں کمی کے حوالے سے بات چیت کر رہے تھے ۔ انہوں نے کہا کہ 2017کے اختتام تک چین میں 30.46ملین افراد غربت کی لکیر سے نیچے زندگی بسر کر رہے تھے ،





Source link