14

we raised a rebellion against goverment, Maulana Fazlur Rehman


اسلام آباد: جمعیت علماء اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ ہم نے حکومت کاغرورخاک میں ملادیاہے، حکمرانوں کی اس حاکمیت کو تسلیم نہیں کرتے اور حکمرانوں کوقوم کے مطالبے کوتسلیم کرنا ہوگا۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد میں آزادی مارچ کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ دھرنےکوایک عشرہ مکمل ہوگیاہے جس پر کارکنان کےجذبےاوراستقامت کوسلام پیش کرتاہوں، ہم نے باطل کےخلاف جہاد بلند کیا ہوا ہے،جابراورمسلط حکومت کےخلاف علم بغاوت بلند کر رکھا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اسلام میں جبرکی کوئی گنجائش نہیں، برصغیرکی پوری تاریخ ہمارےاکابرین سےبھری ہوئی ہے جبری تسلط کسی کابھی ہو آواز بلند ہونی چاہئے، حکمرانوں کی اس حاکمیت کوتسلیم نہیں کرتے اور حکمرانوں کوقوم کے مطالبے کوتسلیم کرنا ہوگا۔

مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ ہم نےحکومت کاغرورخاک میں ملادیاہے، ان کی حکمرانی کاپہاڑریت بن چکاہے تم اب کرسی پربیٹھے رہولیکن قوم تمہیں اب حکمران نہیں مانتی۔

جے یو آئی (ف) کے امیر کا کہنا تھا کہ ہم ہمیشہ 9 نومبرکویوم اقبال کےطورپرمناتےہیں لیکن پہلی بار اقبال کا دن گرونانک کےنام ہوگیا،بھارت نےاس کےبدلےآپ کوکیاتحفہ دیا؟ یہی کہ بابری مسجد ہندوؤں کے حوالے کردی ایسےملک نہیں چلاکرتا،پاکستان کی شناخت اس کانظریہ اورآئین ہے کسی کوپاکستان کےنظریے،آئین،جمہوریت سےکھیلنےکی اجازت نہیں دی جائے گی۔

انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت نےمعیشت پرتوجہ ہی نہیں دی، ایک سال میں گندم کی 30 اورچاول کی پیداوارمیں 40فیصدکمی ہوئی، ملک کوکیامذاق بنادیاہے،کیاہم ایسےچندلوگوں کیلئےہم نےپاکستان حاصل کیاتھا؟

فاٹا کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ فاٹاکےلوگوں کوسبزباغ دکھائےگئے، کہاگیاتھا فاٹاکوہرسال 100ارب روپے دیا جائےگا،کہاگیافاٹاکو10سال میں ایک ہزارارب روپےدیں گے لیکن حکومت نےفاٹاکوایک روپیہ نہیں دیا اورکسی صوبے نےاین ایف سی ایوارڈ میں سےفاٹاکواس کاحصہ نہیں دیا۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ اس نظام کےخلاف جنگ جاری رہےگی،اس میں پسپائی نہیں ہوسکتی،تمام سیاسی جماعتیں رابطےمیں ہیں اور آئندہ کےلائحہ عمل پرمشاورت جاری ہے، آگےبڑھنےکیلئےجوحکمت عملی بنائی جائے گی اس پرعمل کریں گے۔

Comments

comments





Source link