11

تحریک انصاف میں کھلبلی ۔۔۔۔ پنجاب میں بڑے بڑوں کی چھٹی، باقائدہ نوٹیفیکیشن جاری کر دیا گیا – Hassan Nisar Official Urdu News Website


اسلام آباد(ویب ڈیسک) وفاقی دارالحکومت اسلام آباد سمیت پاکستان تحریک انصاف کی صوبائی تنظیمیں تحلیل کردی گئی ہیں۔تحریک انصاف کی کور کمیٹی اور چیئرمین تحریک انصاف کی منظوری سے باضابطہ نوٹیفکیشن جاری کردیا گیاہے۔اس ضمن میں نوٹیفکیشن مرکزی سیکرٹری جنرل عامر محمود کیانی کی جانب سے کیا گیا ۔


پی ٹی آئی کے صوبائی ڈھانچے کی تحلیل کیساتھ ہی ملک بھر میں ریجنز کی تشکیل کا بھی اعلان کردیا گیاہے۔پارٹی کے مرکزی سیکرٹری جنرل کی جانب سے ریجنز کی تشکیل کا باضابطہ نوٹیفکیشن بھی جاری ہوگیاہے۔اس حوالے سے جاری کئے گئے نوٹیفیکشن کے مطابق پنجاب کو شمالی، مرکزی، مغربی اور جنوبی ریجنز میں تقسیم کر دیا گیا۔سندھ کے لئے سکھر، حیدر آباد، کراچی اور نواب شاہ ریجنز قائم کردیے گئے ہیں۔خیبرپختونخواہ، مالاکنڈ، ہزارہ، پشاور اور جنوبی خیبرپختونخواہ ریجنز میں تقسیم کیا گیاہے۔بلوچستان کے لئے شمالی، مرکزی، مغربی اور جنوبی ریجنز کی تشکیل کا اعلان کیا گیاہے۔پارٹی اعلامیے کے مطابق وفاقی دارالحکومت اسلام آباد 3 تنظیمی یونٹس پر مشتمل ہوگا۔پاکستان تحریک انصاف اوورسیز ڈھانچہ 5 ریجنز پر مشتمل ہوگا۔او آئی سی کے لئے امریکی، یورپی، ایشیائی، آسٹریلوی اور افریقی ریجنز قائم کئے گئے ہیں۔پارٹی اعلامیے کے مطابق او آئی سی کے ہر ریجن کا الگ سیکرٹری مقرر کیا جائے گا۔دوسر ی جانب قومی احتساب بیورو (نیب) لاہور نے گزشتہ اڑھائی سالوں کی کارکردگی رپورٹ جاری کردی ہے۔رپورٹ کے مطابق نیب لاہور نے اکتوبر دو ہزار سترہ سے تاحال مجموعی طور پر ایک کھرب چھ ارب روپے کی ریکوری کی ہے جس میں چھ ارب سنتالیس کروڑ روپے سے زائد رقوم کی پلی بارگین شامل ہے۔نیب لاہور بیورو نے اپنے ادارے کا گزشتہ 17 سال کی کارکردگی کا ریکارڈ توڑتے ہوئے اکتوبر 2017 سے تاحال مجموعی طور پر 1 کھرب 6 ارب روپے کی ریکوری ممکن بنادی ۔ریکوری میں رقوم کی صورت میں ڈائریکٹ اور پراپرٹی و دیگر کی صورت میں انڈائریکٹ ریکوری شامل ہے۔اڑھائی سال کے دوران مجموعی طور پر ہاؤسنگ سیکٹر میں 14 ریفرنس دائر کیے گئے جب کہ زیر تفتیش 62 کیسز میں سے 40 کیسز کو پایہ تکمیل تک پہنچایا گیا۔رپورٹ کے مطابق گزشتہ اڑھائی سال کے دوران غیر قانونی ہاؤسنگ سوسائٹیوں کے 54304 متاثرین کیلئے کی پلی بارگین ممکن بنائی گئی جب کہ ڈی جی نیب لاہور کی سربراہی میں 26 ارب کی رقوم صرف ہاؤسنگ سیکٹر میں ملزمان سے برآمد کرائی جا چکی ہیں، 51 ارب روپے مالیت کی بلواسطہ ریکوری پر عمل درآمد بھی کرایا جا چکا ہے۔نیب لاہور کی جاری کردہ رپورٹ کے مطابق اکتوبر 2017 سے اگست 2019 کے دوران نیب پراسیکیوشن ونگ نے 32 ارب روپے مالیت پر مشتمل 14 ریفرنسز احتساب عدالتوں میں دائر کیے۔









Source link