12

’’ عمران خان کو کٹ پتلی وزیر اعظم نہیں کہا جاسکتا۔۔۔‘‘ اسد عمر کو ہٹانے کے بعد جب عثمان بُزدار کو ہٹانے کی تجوویز وزیر اعظم کے سامنے رکھی گئی تو انہوں نے کیا کِیا؟ حامد میر کا تہلکہ خیز انکشاف


اسلام آباد( مانیٹرنگ ڈیسک) وزیر اعظم عمران خان پر اپوززیشن جماعتوں اور مخالفین کی جانب سے یہ الزام لگایا جاتا ہے کہ عمران خان ایک کٹ پتلی وزیر اعظم ہیں ، وہ کسی اور کے اشاروں پر ناچتے ہیں اور انہیں جو حکم ملتا ہے وہ اس بجا لانے کے پابند ہوتے ہیں۔ لیکن کیا وزیر


اعظم واقعی ہی سلیٹڈے اور کٹ پتلی ہیں، حامد میر نے اندر کی کہانی بیان کر دی ۔ تفصیلات کے مطابق سینئر صحافی و تجزیہ نگار حامد میر کا کہنا ہے کہ جب اسد عمر کو وزارت خزانہ سے ہٹایا گیا تو ہمیں یہ بتایا گیا کہ اگلا نمبر عثمان بُزدار کا کے اور انہیں بھی ہٹا دیا جائے گا، جب یہ تجویز وزیر اعظم عمران خان کے سامنے رکھی گئی تو عمران خان ڈٹ گئے اور انہوں نے صاف الفاظ میں انکار کر دیا ، جس سے مجھے یہ پتہ چلا کہ عمران خان کم از کم سلیکٹڈ نہیں ہیں اور انہیں جو کٹ پتلی کہا جاتا ہے وہ بھی درست نہیں ہے، حامد میر کا کہنا تھا کہ وزیراعظم جمعہ کو مظفر آباد میں کشمیریوں سے یکجہتی کے لئے جلسہ کریں گے، اس جلسے میں اپوزیشن کو بھی شرکت کی دعوت دینی چاہئیے،تحریک انصاف ،پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ ن کا اتفاق رائے ، آئیں چلیں سب مظفرآباد، بن کر کشمیریوں کی آواز۔ حامد میر کے اس اعلان پر پروگرام کے تمام شرکا جن میں پاکستان پیپلز پارٹی کی سینیٹر رخسانہ زبیری، مسلم لیگ ن مرکزی رہنماء اور سابق گورنر سندھ محمد زبیر نے بھی انکی حمایت کا اعلان کیا، جبکہ وزیر اعظم عمران خان کے معاون خصوصی کے عہدے سے سبکدوش ہونے والے ندیم افضل چن کا کہنا تھا کہ میں آپ کی بات سے اکتفا کرتا ہوں، ہم آپس میں جو مرضی کریں ، جس طرح مرضی رہیں لیکن کشمیر کے معاملے پر اپوزین کو بھی ساتھ لے کر چلنا چاہیئے اور یہ حکومت کی ذمہ داری ہے۔









Source link