10

سلامتی کونسل میں کسی قرارداد پر کیسے کارروائی ہوتی ہے ؟ اقوام متحدہ کے سابق مستقل مندوب نے بتادیا


لاہور (ویب ڈیسک) اقوام متحدہ سابق مستقل مندوب منیر اکرم نے کہا ہے کہ سلامتی کونسل میں کسی بھی قرارداد پر درجہ بہ درجہ عمل کیا جاتاہے ، پہلے سلامتی کونسل کے ارکان آپس میں اجلاس کرتے ہیں اوراگر کچھ کہنا ہوتو کہہ دیتے ہیں ، اس کے بعد دیکھتے ہیں کہ سکیورٹی کونسل کے


ممبرز اتفاق کرتے ہیں کہ اس پر کیسے آگے بڑھا جائے؟ دنیا نیوز کے پروگرام ”دنیا کامران خان کے ساتھ“میں گفتگو کرتے ہوئے منیر اکرم نے کہا کہ سلامتی کونسل میں کسی بھی قرارداد پر درجہ بہ درجہ عمل کیا جاتا ہے ، پہلے سلامتی کونسل کے ارکان آپس میں اجلاس کرتے ہیں اوراگر کچھ کہنا ہو تو کہہ دیتے ہیں ، اس کے بعد دیکھتے ہیں کہ سکیورٹی کونسل کے ممبرز اتفاق کرتے ہیں کہ اس پر کیسے آگے بڑھا جائے؟ انہوں نے کہا کہ سلامتی کونسل کے ممبران پہلی ملاقات آپس میں کرتے ہیں اور ان کو مسئلہ پر بریفنگ دی جاتی جس پر سوچ بچار کی جاتی ہے ۔ ان کا کہنا تھا کہ اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل بھی کبھی کبھار اس اجلاس میں آ جاتے ہیں۔ منیر اکرم نے کہا کہ جب ایک قرارد اد اپنا لی جاتی ہے تو دونوں پارٹیاں اس قرار داد کو مان جاتی ہیں توپھر وہ اس قرارداد کی پابندی ہوجاتی ہیں لیکن اب ہندوستان اپنے موقف سے پیچھے ہٹ گیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ میں کسی قرارداد پر عمل در آمدکا ایک لمبا عمل ہے لیکن پاکستان نے جو قرار داد موو کی ہے ، اس پر ہم کو کامیابی ملے گی ۔ان کاکہنا تھا کہ اس وقت مقبوضہ کشمیر میں مکمل لاک ڈاﺅ ن اور پوری وادی میں کرفیونافذ ہے ۔ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق مسلم لیگ ن کے مرکزی رہنماء خواجہ آصف نے کہا ہے کہ ملیحہ لودھی کو کمزورکرنا مفادات کو نقصان پہنچانے کے مترادف ہے، اقوام متحدہ میں ہم نے کشمیرکا مقدمہ لڑنا ہے،


جبکہ ملیحہ لودھی سے متعلق جھوٹ پر مبنی مہم چل رہی، غیر متعلقہ تصاویر شائع کی جا رہی ہیں۔ مسلم لیگ ن کے مرکزی رہنماء خواجہ آصف نے ٹویٹر پر اپنے پیغام میں کہا کہ سلامتی کونسل کے اجلاس کے موقع پر ہماری مستقل مندوب ملیحہ لودھی سے متعلق جھوٹ پر مبنی مہم چل رہی ہےاور ان سے غیر متعلقہ تصاویر شائع کی جا رہی ہیں۔ ہم نےاقوام متحدہ میں کشمیرکا مقدمہ لڑنا ہے۔اپنے مستقل مندوب کو کمزور کرنا اسوقت ہمارے مفادات کو نقصان کے مترادف ہے۔ سلامتی کونسل کے اجلاس کے موقع ملیحہ لودھی ھماری مستقل مندوب پر جھوٹ پر مبنی مہم چل رہی ھےاور ان سے غیر متعلقہ تصاویر شائع کی جا رہی ھیں۔ھم نےاقوام متحدہ میں کشمیرکا مقدمہ لڑنا ھے۔اپنے مستقل مندوب کو کمزور کرنا اسوقت ھمارے مفادات کو نقصان کے مترادف ھے دوسری جانب وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے لاہور میں یوم سیاہ کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ دنیا دیکھ رہی ہے کہ 11واں دن ہے اورکشمیر میں کرفیو نافذ ہے، کھانا دستیاب نہیں، ادویات میسر نہیں، تمام قیادت پابند سلاسل ہے۔ کشمیراور ریاست کومٹانے کیلئے مودی نے جوچال ہے اس کو کشمیری قوم نے مسترد کردیا ہے۔ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ ساری قوم کو کشمیریوں کو یکجا ہونا چاہیے۔ پاکستانی کی تمام سیاسی قیادت کو کشمیر کاز کیلئے متحد ہوجانا چاہیے، یہ سیاست کا وقت نہیں ہے۔ کشمیر وادی، لداخ مصر بن چکا ہے، سب کی نگاہیں پاکستان اور دنیا کی طرف لگی ہوئی ہے۔ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ آج کشمیریوں کا مقدمہ عالمی سطح پر پہنچ چکا ہے، اس سے پہلے خون خرابا ہو، سلامتی کونسل کو اپنا کردارادا کرنا ہوگا۔








Source link