8

پاکستانی دفتر خارجہ نے بھارت کو منہ توڑ جواب دینے کے لیے کس کو طلب کر لیا ؟ جانیے – Hassan Nisar Official Urdu News Website


اسلام آباد (ویب ڈسیک ) پاکستانی دفتر خارجہ نے بھارتی ڈپٹی ہائی کمشنر کو طلب کرلیا، دفترخارجہ نے ایل اوسی پر بلااشتعالفائرنگ پراحتجاج کیا، بھارت 2 سال میں 1972مرتبہ جنگ بندی کی خلاف ورزی کرچکا ، سیز فائر کی خلاف ورزی علاقائی امن اورسلامتی کیلئے خطرہ ہے،بھارتاپنی افواج کو جنگ معاہدے


پر مکمل عملدرآمد کی ہدایت کرے۔میڈیا رپورٹس کے مطابق پاکستانی دفتر خارجہ نے ایل اوسی پر بلااشتعال فائرنگ پر جواب طلبی کیلئے بھارت کے ڈپٹی ہائی کمشنر کو طلب کرلیا۔ پاکستان نے ایل اوسی پر سیز فائر معاہدے کی خلاف ورزی پر شدید احتجاج کیا۔ پاکستا ن نے احتجاج کیا کہ بھارت نے ایل اوسی پر لیپا اور بٹل سیکٹر پر بلااشتعال فائرنگ کی۔بھارتی بلااشتعال فائرنگ سے پاک فوج کے 3جوان شہید ہوگئے ہیں۔احتجاجی مراسلے میں کہا گیا کہ بھارتی افواج ایل اوسی پر تسلسل کے ساتھ شہری آبادی کو بھاری ہتھیاروں سے نشانہ بنا رہی ہے۔بھارتی کی جانب سے 2017ء سے جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزیوں میں تیزی آئی ہے۔دفترخارجہ پاکستان نے کہا کہ بھارت 2سال میں 1972مرتبہ جنگ بندی کی خلاف ورزی کرچکا ہے۔بھارت کی جانب سے سیز فائر کی خلاف ورزی علاقائی امن اورسلامتی کیلئے خطرہ ہے۔دفتر خارجہ نے احتجاجی مراسلے میں مزید کہا کہ پاکستان نے بھارت پر زور دیا کہ 2003ء کے سیزمعاہدے کا احترام کرے۔بھارت اپنی افواج کو جنگ معاہدے پر مکمل عملدرآمد کی ہدایت کرے۔بھارت لائن آف کنٹرول اورورکنگ باؤنڈری پر امن برقراررکھے۔بھارت امن مشن کو سلامتی کونسل کی قراردادوں کے مطابق ادا کرنے دے۔ دوسری جانب وزیراعظم عمران خان نے لائن آف کنٹرول پر بھارتی فوج کی جانب سے بلااشتعال فائرنگ کی شدید مذمت کی ہے۔وزیراعظم آفس کے میڈیا ونگ کی طرف سے جاری بیان کے مطابق وزیراعظم نے بھارتی فوج کی بلااشتعال فائرنگ کی شدید مذمت کرتے ہوئے شہید ہونے والے پاک فوج کے جوانوں کے درجات کی بلندی کیلئے دعا کی۔









Source link