9

جنگ کا کنٹرول اب پاکستان کے ہاتھ میں۔۔۔!!!بھارتی جارحیت کی صورت میں پاک فوج کیسا جواب دے گی؟ بڑی خبر دیدی گئی


اسلام آباد (نیوز ڈیسک) مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کے بعد سے پاکستان اور بھارت کے مابین تعلقات کشیدہ ہوئے ۔ پاکستان اور بھارت کے مابین تعلقات کشیدہ ہونے کے بعد جنگ کے خطرات سے متعلق خبریں موصول ہونا شروع ہوئیں اور یہی خیال کیا جا رہا تھا کہ شاید مقبوضہ کشمیر


سے متعلق بھارتی اقدام پر اب جنگ چھڑ جائے۔جنگ کے امکانات اور خدشات پر کئی مبصرین نے اپنی اپنی رائے کا اظہار کیا تاہم اس حوالے سے سینئیرصحافی وجاہت سعید خان نے مائیکروبلاگنگ ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے پیغام میں کہا کہ پاک فوج اس وقت دوسرے درجے کے خطرے پر ہے کہاں جنگ کا خطرہ قدرے کم ہے۔ صحافی کے مطابق پاک فوج میں اس طرح کے چار درجات ہوتے ہیں۔ جس میں سے چوتھا درجہ وہ ہوتا ہے جس میں کوئی خطرہ نہیں ہوتا۔لیکن اس وقت پاک فوج کے افسران کافی پُر اعتماد ہیں۔ اب یہ پاکستان کے ہاتھ میں ہے کہ وہ اس کشیدگی کو کتنا بڑھاوا دیتا ہے۔

یاد رہے کہ بھارت کی جانب سے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کے بعد اسے دو حصوں میں تقسیم کرنے کا اعلان کیا تھا ۔ جس کے بعد مقبوضہ کشمیرکی خصوصی حیثیت ختم کرنے کاصدارتی حکم نامہ بھی جاری کیا گیا۔
5 اگست 2019ء کو بھارتی پارلیمنٹ کے اجلاس میں بھارتی وزیرداخلہ نے آرٹیکل 370 ختم کرنے کا بل پیش کیا ، تجویز کے تحت غیر مقامی افراد مقبوضہ کشمیر میں سرکاری نوکریاں حاصل کرسکیں گے۔ بعد ازاں بھارتی صدر نے آرٹیکل 370 ختم کرنے کے بل پر دستخط کر دیے اور گورنر کاعہدہ ختم کرکے اختیارات کونسل آف منسٹرز کو دے دیئے، جس کے بعد مقبوضہ کشمیرکی خصوصی حیثیت ختم ہوگئی۔ اس فیصلے پر جہاں پاکستان نے شدید مذمت کا اظہار کیا وہیں عالمی عدالت انصاف نے بھی مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کے معاملے پر تحفظات کا اظہار کیا تھا۔









Source link